انٹرنیشنل

جاپانی دواء نے کام کردکھایا،کوروناوائرس قابو میں آنے لگا

بیجنگ(نیوز ڈیسک) چینی حکام کا کہنا ہے کہ فلو کے علاج کیلئے استعمال ہونے والی جاپانی دوا سے کورونا وائرس کے علاج میں کافی حد تک مدد ملی ہے۔جاپانی میڈیا کے مطابق چین کی وزارت سائنس و ٹیکنالوجی کے ایک اعلیٰ اہلکار شِن مِن نے دعویٰ کیا ہے کہ فلو میں استعمال ہونے والی دوا فیوی پِراوِر ‘جو کہ مارکیٹ میں ایویگن کے نام سے موجود ہے’ کورونا سے متاثرہ افراد کے علاج میں نہایت مؤثر ثابت ہوئی ہے۔چینی اہلکار کا کہنا ہے کہ چین کے شہر ووہان اور صوبے شِنزن کے 340 افراد کو تجرباتی طور پر یہ دوا دی گئی جس کے نتیجے میں نہایت حوصلہ افزا نتائج سامنے آئے ہیں۔شِن مِن کے مطابق کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کو جب ایویگن نامی فلو کی دوا دی گئی تو اوسطاً 4 دن بعد وہ صحت یاب ہوگئے جب کہ دیگر مریضوں کو تندرست ہونے میں اوسطاً 11 دن لگے۔

دوسری جانب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن نے ملیریا کی دو دوائیں کورونا وائرس کے مریضوں پر آزمانے کی منظوری دے دی ہے۔نیوزبریفنگ میں ٹرمپ کا کہنا تھا کہ کلورو کوئن Chloroquine اور ہائیڈروکسی کلورو کوئن Hydroxychloroquine نامی دوائیں ملیریا اور گٹھیا کے مریضوں کو دی جاتی ہیں البتہ ایف ڈی اے نے ان دواؤں کو کورونا کے مریضوں پر بھی آزمانے کی منظوری دے دی ہے۔ صدر ٹرمپ نے یہ بھی کہا کہ وائٹ ہاوس نے کورونا وائرس کے علاج اور ویکسین کی تیاری کے لیے سرخ فیتے کی رکاوٹیں ختم کردی ہیں۔اس موقع پر پریس بریفنگ میں ایف ڈی اے کے کمشنر ڈاکٹر اسٹیفن ہان نے بتایا کہ دونوں دوائیں کلینیکل ٹرائل میں استعمال کی جائیں گی اور ٹرائل کے بعد سامنے آنے والے نتائج کی بنیاد پر تعین کیا جائے گا کہ کورونا کے مریضوں کے لیے یہ دوائیں کتنی فائدے مند ہیں۔

Show More

Related Articles

26 Comments

  1. An impressive share! I’ve just forwarded this onto a colleague who had been doing a little homework on this. And he in fact ordered me dinner because I stumbled upon it for him… lol. So allow me to reword this…. Thank YOU for the meal!! But yeah, thanx for spending the time to discuss this matter here on your site.|

  2. Blogging is my favorite reading medium, too. (Granted, I’m usually reading about sports, but it still counts as reading, right?) Those who do it well, like Jon, Glen, and the others here at Smart Blogger, are worth their weight in gold. 
    To be able to take a complicated concept and break it down into easily digestible blog posts that are the size of a small eBook is a skill for sure.
    카지노사이트

  3. Going back to your text, I think it’s good for many bloggers and those who post more of their blog entries they enjoy, contribute more positively to the debate.
    But this is the scenario of the Brazilian political blogosphere. I think that in other countries the same thing should happen.
    카지노사이트

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
Close