انٹرنیشنل

جرمن صدر کا ایرانی قوم اور حکمرانوں کے نام خاص پیغام ، مبارکباد بھی دے ڈالی ، مگر کس بات پر ؟ ایک خبر نے پوری دنیا کو حیران کر دیا

برلن(ویب ڈیسک) ایران کے قومی دن کے موقع پر جرمن صدر فرانک والٹر شٹائن مائر کی طرف سے تہران حکومت کو غلطی سے مبارکباد کا ٹیلیگرام بھیج دیا گیا جرمن ایوان صدر کے ترجمان نے میڈیا کو بتایا کہ تہران میں جرمن سفارتخانے نے ایران کے قومی دن کی تعطیل کے موقع پر تہران حکومت

کو مبارکباد کا ٹیلیگرام بھیج دیا حالانکہ جرمن صدر ایران کی موجودہ سیاسی صورتحال اور نئی پیشرفت کے باعث اس سال ایران کے قومی دن کے موقع پر مبارک باد کا پیغام نہیں بھیجنا چاہتے تھے ۔سفارتخانے کی غلطی کو شرمناک قرار دیا جا رہا ہے ۔یاد رہے کہ مطابق تہران سمیت تمام صوبائی دارالحکومتوں اور سینکڑوں شہروں میں مقامی وقت صبح 9 بجے سے سرد موسم کے باوجود انقلاب کی 41ویں سالگرہ کی مناسبت سے عوامی اور سرکاری سطح پر بھرپور تقاریب اور ریلیوں کا آغاز کردیا گیا ہے. اس موقع پر ملک بھر میں مختلف ریلیاں اور تقریبات کا اہتمام کیا گیا ہے. یوم آزادی کی ریلیوں میں کروڑوں شہریوں کی تاریخی شرکت اس بات کا ثبوت ہے کہ ایرانی عوام ہمیشہ اسلامی جمہوریہ ایران کے نظام کی حمایت میں میدان میں حاضر ہیں.اس کے علاوہ ان ریلیوں سے یہ بات واضح ہوتی ہے کہ دشمنوں کی جانب سے دباؤ، نفسیاتی اور معاشی جنگوں سے ایرانی عوام کے مضبوط عزم کمزور نہیں ہوگا.ایرانی عوام بشمول خواتین، مرد، نوجوان، بچے اور بوڑھے انقلاب کے عظیم بانی حضرت امام خمینی (رح) کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے سپریم لیڈر حضرت آیت اللہ العظمی ‘سید علی خامنہ ای’ کے ساتھ اپنی وفاداری کا اظہار کیا ہے. ایرانی عوام سامراجی قوتوں بشمول امریکہ کو بتائیں گے کہ مملکت ایران اور اس کی غیرتمند قوم دشمنوں اور سامراجیوں کی دھمکیوں سے ڈرنے والی نہیں. شہید جنرل قاسم سلیمانی جو امریکی صدر کے حکم کے ساتھ عراق میں شہید کردیا گیا، کی تصاویر عوام کے ہاتھوں میں دیکھائی جاتی ہے۔

Show More

Related Articles

45 Comments

  1. Thanks for the sensible critique. Me & my neighbor were just preparing to do some research about this. We got a grab a book from our area library but I think I learned more from this post. I am very glad to see such excellent information being shared freely out there.

  2. I’ve been surfing online more than 3 hours today, yet I never found any interesting article like yours. It’s pretty worth enough for me. In my view, if all web owners and bloggers made good content as you did, the web will be much more useful than ever before.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
Close