بزنس

کپاس کی پیداوار کم،روئی کے بھاؤ میں غیرمعمولی مندی

کراچی(نمائندہ کماس )رواں سال کپاس کی پیداوار میں ریکارڈ کمی کے باوجود روئی کی قیمتوں میں غیر معمولی مندی کا رجحان ہے جس کے باعث کاٹن سیکٹر اور کاشتکاروں میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے ۔چیئر مین کاٹن جنرز فورم احسان الحق نے بتایا کہ 15 نومبر تک ملک بھر کی جننگ فیکٹریوں میں صرف 68 لاکھ 58 ہزار بیلز کے برابر پھٹی پہنچی ہے جو پچھلے سال کے اسی عرصے کے مقابلے میں ریکارڈ 21 فیصد کم ہے۔ انہوں نے بتایا کہ تنزانیہ ،ارجنٹائن اور چند افریقی ممالک جہاں روئی پاکستان کے مقابلے میں سستی بتائی جا رہی ہے سے کپاس کی درآمد میں اضافے کے باعث پاکستان میں روئی کی قیمتوں میں ریکارڈ مندی کا رجحان سامنے آیا ہے اور روئی کی قیمتیں 600 روپے فی من کمی کے بعد 9 ہزار 100 روپے فی من تک گر گئیں،تاہم پاکستان میں کپاس کی مجموعی ملکی پیداوار توقعات سے کم ہونے کے باعث آئندہ چند روز کے دوران روئی اور پھٹی کی قیمتوں میں تیزی کا رجحان متوقع ہے ۔ کاٹن جنرز نے وزیر اعظم سے اپیل کی کہ بیرون ملک سے ڈیوٹی فری درآمد ہونے والی روئی پر ڈیوٹیز کا نفاذ کیا جائے تاکہ کاشتکاروں کو ان کی محنت کا صحیح معاوضہ مل سکے۔

Show More

Related Articles

11 Comments

  1. In this awesome scheme of things you actually get an A+ just for effort and hard work. Where you lost me personally was in all the specifics. As they say, details make or break the argument.. And it couldn’t be much more accurate right here. Having said that, allow me inform you exactly what did do the job. Your article (parts of it) is rather powerful which is probably why I am taking an effort in order to opine. I do not really make it a regular habit of doing that. Secondly, while I can notice a leaps in reason you come up with, I am not necessarily certain of exactly how you appear to unite the details which inturn make the conclusion. For right now I will subscribe to your point but hope in the future you connect the facts much better.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
Close