بزنس

ملکی معیشت کے لیے زبردست خوشخبری۔۔۔ عالمی سرمایہ کاروں نے پاکستان کا رُخ کر لیا، دھڑا دھڑ آرڈر ملنا شروع

لاہور(ویب ڈیسک)گورنر اسٹیٹ بینک کا پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کو بریفنگ کے دوران کہنا تھا کہ کرونا وائرس کے باعث چین کے آرڈر منسوخ ہو رہے ہیں جبکہ منسوخ ہونے والے کچھ آرڈر اب پاکستان کو ملنا شروع ہو گئے ہیں۔رانا تنویر حسین کی زیر صدارت ہونے والے پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے اجلاس میں گورنر سٹیٹ بینک رضا باقر کا اپنی

بریفنگ میں کمیٹی کو کہنا تھا کہ کرونا وائرس کے باعث دنیا بھر کے سرمایہ کاروں کا چین میں آنا جانا بند ہو چکا ہے جس کا فائدہ پاکستان کو آرڈرز کی صورت میں ملنا شروع ہو گیا ہے۔اسٹیٹ بینک کے گورنر رضا باقر کا اپنی بریفنگ میں مزید کہنا تھا کہ جین اور ایران میں کرونا وائرس کے پھیلاؤ کی وجہ سے دونوں ممالک کے ساتھ پاکستان کی سپلائی چین بھی متاثر ہوئی ہے۔ جس کا اندازہ لگانے کے لیے کام جاری ہے۔ جبکہ پاکستان میں کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو اسٹیٹ بینک کی جانب سے کس طرح سے کنٹرول کیا جائے گا اس کا بھی بغور جائزہ لیا جا رہا ہے۔پاکستان میں شرح سود کے حوالے سے بات کرتے ہوئے گورنر اسٹیٹ بینک کا کہنا تھا کہ پاکستان میں شرح سود دیگر ممالک کی نسبت بہت کم ہے۔ جس کے باعث سرمایہ کار پاکستان کی طرف راغب ہو رہے ہیں۔دوسری جانب رضا باقر کا کہنا تھا کہ ملکی زرمبادلہ کے ذخائر میں ساڑھے نو ارب ڈالر کا اضافہ ہوچکا ہے اگر اسی طرح زرمبادلہ کے ذخائر میں ڈالر کا اضافہ ہوتا رہا تو ہمیں آئی ایم ایف کے علاوہ کسی اور مالیاتی ادارے کے آگے قرضوں کے لئے ہاتھ پھیلانا نہیں پڑے گا۔بعد ازاں ملک میں بڑھتی ہوئی مہنگائی کے حوالے سے بات کرتے ہوئے گورنر اسٹیٹ بینک کا کہنا تھا کہ رواں ماہ مہنگائی کی شرح میں دو فیصد تک کمی واقع ہوئی ہے جو کہ مزید کم ہوگی جبکہ رواں مالی سال میں مہنگائی کی شرح 11 سے 12 فیصد تک رہے گی۔ آئی ایم ایف کے حوالے سے بات کرتے ہوئے گورنر اسٹیٹ بینک کا کہنا تھا کہ آئی ایم ایف سے ہمیشہ بات چیت کچھ لو اور کچھ دو کی پالیسی پر ہوتی ہے۔ جبکہ ملک میں ہونے والی معاشی اصلاحات میں آئی ایم ایف شراکت دار ہے۔یاد رہے کہ کرونا وائرس اب تک 60 سے زائد ممالک میں پھیل چکا ہے جس کے باعث اب تک درجنوں ہلاکتیں ہو چکی ہیں اور لوگوں کی بہت بڑی تعداد اب بھی اس سے متاثر ہے جن کا علاج قرنطینہ میں علاج جاری ہے۔ جبکہ دوسری جانب چین کے معیشت پر کرونا وائرس کے بہت ہی منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
Close