پاکستان

جو ہے جہاں ہے روک دو۔۔۔۔۔ اسحاق ڈار کی رہائش گاہ کے حوالے سے عدالت نے ایک اور حکم جاری کردیا

لاہور(کورٹ رپورٹر) پنجاب حکومت کا اقدام غیر قانونی اور عدالتی احکامات کی کھلی خلاف ورزی ہے ، درخواست گزارتبسّم ڈار کا موقف جسٹس شاہد بلال حسن نے حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے پنجاب حکومت سے 10 دنوں میں جواب طلب کرلیالاہور ہائیکورٹ نے سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی رہائش گاہ کو پناہ گاہ

میں تبدیل کرنے کیخلاف حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے پنجاب حکومت سے 10 دنوں میں جواب طلب کرلیا ہے ۔تفصیل کے مطابق لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شاہد بلال حسن نے تبسّم ڈار کی درخواست پر سماعت کی جس میں گھر کو پناہ گاہ میں تبدیل کرنے کے حکومتی اقدام کو چیلنج کیا گیا۔ درخواست گزار کے وکیل مصباح الحسن نے نشاندہی کی کہ اسلام آباد ہائیکورٹ نے گھر کی نیلامی کرنے سے روکا تھا لیکن احکامات کے باوجود پنجاب حکومت نے گھر کو غیر قانونی طور پر پناہ گاہ میں تبدیل کر دیا ۔ وکیل مصباح الحسن نے نکتہ اٹھایا کہ پنجاب حکومت نے عدالتی احکامات کی کھلی خلاف ورزی کی ہے ۔ وکیل نے یہ بھی نشاندہی کی کہ صوبائی حکومت کا اقدام غیر قانونی ہے اور قانون میں ایسی کوئی گنجائش نہیں ہے کہ کسی کے گھر کو اس کی منشا کے بغیر پناہ گاہ میں تبدیل کر دیا جائے ، مصباح الحسن نے دعویٰ کیا کہ حکومت مسلم لیگ ن کے رہنماؤں کو سیاسی انتقام کا نشانہ بنا رہی ہے ۔ درخواست گزار کے وکیل نے استدعا کی کہ اسحاق ڈار کے گھر کو پناہ گاہ میں تبدیل کرنے کے حکومتی اقدام کو کالعدم قرار دیا جائے ۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
Close